خیبر پختونخوا میں کورونا کی وجہ سے اموات کی شرح زیادہ کیوں ہے؟

پاکستان میں کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کے سرکاری اعداد و شمار میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ ملک میں اس وائرس سے اموات کی شرح 1.4 فیصد کے قریب ہے لیکن خیبر پختونخوا میں شرحِ اموات ساڑھے تین فیصد کے قریب پہنچ چکی ہے۔
دوسری جانب پاکستان میں اس وائرس کی تشخیص کے لیے ٹیسٹ کرنے کی شرح پر بھی سوالات اٹھائے جا رہے ہیں اور ماہرین کا کہنا ہے کہ اصل حقائق جاننے کے لیے مشتبہ مریضوں کے ٹیسٹ کرنا ضروری ہے۔


پاکستان کے چاروں صوبوں، گلگت بلتستان، اور پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر میں اس وائرس کے شبہے میں آئے مریضوں کے ٹیسٹ کرنے کی شرح بھی مختلف ہے جبکہ اس سے متاثرہ افراد کی تعداد، اس وائرس سے اموات اور صحت یابی کی شرح بھی مختلف سامنے آئی ہے۔

خیبر پختونخوا: شرح امواتِ میں آگے

اگرچہ خیبر پختونخوا میں صوبہ پنجاب اور صوبہ سندھ کی نسبت اس وائرس سے مصدقہ متاثر ہونے والے افراد کی تعداد کافی کم ہے لیکن اس صوبے میں فوت ہونے والے افراد کی شرح سب سے زیادہ ہے۔
خیبر پختونخوا میں کل متاثرہ افراد کی تعداد 527 ہے جبکہ انتقال کرنے والے افراد کی تعداد 18 تک پہنچ گئی ہے۔ اس حساب سے اموات کی شرح 3.4 فیصد بنتی ہے۔
اسی طرح اس صوبے میں صحتیاب ہونے والے افراد کی تعداد 70 ہے اور اس حساب سے یہ شرح 13.3 بنتی ہے۔
ماہرین کے مطابق خیبر پختونخوا میں کم ٹیسٹ کرنے کی وجہ سے متاثرہ افراد کی حقیقی تعداد سامنے نہیں آ رہی۔
اس کے علاوہ خیبر پختونخوا میں وائرس زیادہ پھیلا بھی ہے اور اس کا اندازہ اس سے لگایا جا سکتا ہے کہ صوبے کے بیشتر اضلاع میں اس وائرس سے متاثرہ یا اس وائرس سے متاثر ہونے کے شبہے میں مریض سامنے آئے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *